Khabren News.com

Be Updated

مسلم طلباء محاذ اور حکومتی کمیٹی میں مذاکرات۔

مسلم طلباء محاذ اور حکومتی کمیٹی میں مذاکرات۔
شہیر سیالوی، محسن عباسی اور عبید عباسی کی قیادت میں مسلم طلباء محاذ کی مذاکراتی کمیٹی کی حکومتی اراکین سے مذاکرات جن میں
1۔ شاہ محمود قریشی(فارن منسٹر)
2۔ پیر نور الحق قادری(وزیر مذہبی امور)
3۔ علی محمد خان(وزیر پارلیمانی امور) موجود تھے۔

●3 گھنٹے طویل مذاکرات میں سب بڑی کامیابی یہ تھی کہ طلباء کے مطالبے پر تمام مسلم ممالک کو خطوط ارسال کر دیئے گئے اور OIC کے تمام مسلم ممالک کا اجلاس ناموس رسالت کے عنوان پر نومبر کے دوسرے ہفتے Algeria میں طلب کر دیا گیا ہے۔
● حکومت نے وعدہ کیا کہ تمام ممالک کو on board لے کر international blasphemy law کی روشنی میں گستاخ کی سزا پر بین الاقوامی سطح پر عمل درآمد ہو۔
● ایف آئی اے FIA کے Cyber Crime Wing میں ناموس رسالت سیل قائم کیا جائے گا جس کا کام صرف گستاخوں کا سد باب کرنا ہوگا۔
● فرانسیسی سفیر کو ملک بدر کرنے پر طلباء نے زور دیا تو شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ اس معاملے کو ہم 3 نومبر کو کیبنٹ کی میٹنگ میں زیر بحث لائیں گے اور قرارداد قومی اسمبلی میں لائی جائے گی جس کے بعد کوئی فیصلہ کیا جائے گا۔
اس نکتے پر طلباء کا Dead Lock قائم رہا، مسلم طلباء محاز کی قیادت کا کہنا تھا کہ پہلے تمام مطالبات کو ماننے پر ہم شکر گراز ہیں لیکن ہمارا سب سے اہم مطالبہ سفیر کو ملک بدر کرنا تھا لہذا ہم اسمبلی کے اجلاس میں اراکین اسمبلی کی رائے تک کا انتظار کرتے ہیں۔ اگر قرارداد کا فیصلہ ہمارے حق میں آگیا تو ہم خیر مقدم کریں گے ورنہ احتجاج کا جمہوری حق رکھتے ہیں جو آملہ کے اجلاس کے بعد ہوگا۔
نوٹ؛ ہم نے امت کا مقدمہ اپنی حکومت کے سامنے رکھا جسے بہت سنجیدگی سے لیا گیا۔ یاد رہے کہ ہم اپنے اصل مطالبے پر اب بھی قائم ہیں۔ کارکنان رابطے میں رہیں اور اگلے لائے عمل کا انتظار کریں۔
الحمداللہ شروع کے مطالبات کا تسلیم ہونا کوئی چھوٹی کامیابی نہیں ہے۔

Link in Bio:

https://khabrennews.com/?p=1645

Please follow and like us:

Corona Virus Current Status in Pakistan

Follow all SOP. Keep social distancing, Wear mask